لاہور الیکشن میں دھاندلی روکنے کی حکمت عملی تیار، عمران

1
1666

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ انہوں نے لاہور کے حلقہ این اے-122 میں 11 اکتوبر کو ہونے والے ضمنی الیکشن میں دھاندلی روکنے کی موثر حکمت عملی تیار کر لی۔

اتوار کو ہونے والے ضمنی الیکشن پی ٹی آئی اور حکمران جماعت پاکستان مسلم لیگ-نواز کیلئے انتہائی اہمیت اختیار کرچکا ہے اور دونوں پارٹیوں کی پوری توجہ اس وقت اس حلقے پر مرکوز ہو چکی ہے۔

آج عمران خان نے یہاں سمن آباد میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’جنہوں نے پہلے دھاندلی کی اب وہی دوبارہ الیکشن کر وا رہے ہیں‘۔

انہوں نے ایک بار پھر ن لیگ کی حکومت کو دھاندلی کی پیداوارقرار دیتے ہوئے کہا ’عجیب نظام ہے جہاں لوگ تحریک انصاف کےساتھ ہیں مگر انتخابات ن لیگ جیت جاتی ہے‘۔

انہوں نے الزام لگایا کہ ن-لیگ نے خواتین کے پولنگ اسٹیشنز پر دھاندلی کا منصوبہ بنایا ہے لیکن اس دفعہ پی ٹی آئی دھاندلی روکنے کیلئے پہلے سے بہتر تیاری کرے گی۔

انہوں نے بتایا کہ چوہدری محمد سرور پی ٹی آئی کے کارکنوں کو دھاندلی روکنے کی تربیت دے رہے ہیں۔

عمران خان نے مطالبہ کیا کہ پولنگ کے بعد ووٹوں کے تھیلے لے کر جانے والی گاڑی میں بھی فوجی تعینات ہونا چاہیے جبکہ تحریک انصاف کے کارکن بھی ریٹرننگ افسران کی گاڑی کے پیچھے جائیں گے۔

عمران نے کہا ’نوازشریف نے 2017 تک لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا اعلان کیا تاہم نیپرا کے مطابق لوڈشیڈنگ 2020سے پہلے ختم نہیں ہوگی‘۔

’عوام پینے کے پانی کو ترس رہی ہے لیکن حکومت اربوں روپے میٹرو بس اور میٹرو ٹرین پر لگارہی ہے۔‘

پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا تھا کہ 11 اکتوبر فیصلے کا دن ہوگا اور این اے-122کے عوام اِس دن دھاندلی کو شکست دیں۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشیداحمد نے جلسے سے خطاب میں پیش گوئی کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ دنوں میں پاکستانی سیاست میں زلزلے آنے والے ہیں۔

پی ٹی آئی کے جنرل سیکریٹری جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ 11 اکتوبرکو ان کا شیرسے نہیں بلکہ گیڈرسے مقابلہ ہے۔

1 COMMENT

  1. I am curious to learn what blog platform you will be utilizing?

    I’m experiencing some small security issues with my latest
    website and I might want to find some thing secure. Are you experiencing any solutions?

LEAVE A REPLY