جانیے این اے154 کا فیصلہ پی ٹی اؑی کے حق میں ہونے کی وجہ

0
1792

این اے-154 : فیصلہ تحریک انصاف کے حق میں

ملتان: الیکشن ٹربیونل نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 154 (لودھراں) میں مبینہ دھاندلی کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے جہانگیر ترین کا موقف درست قرار دیتے ہوئے دوبارہ پولنگ کا حکم دے دیا ہے۔

الیکشن کمیشن کے ٹریبونل نے این اے 154 بھی فیصلہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے امیدوار جہانگیر ترین کے حق میں دے دیا جبکہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے امیدوار صدیق بلوچ کے خلاف فیصلہ سنایا ہے۔

الیکشن ٹربیونل حلقہ این اے-154میں مبینہ الیکشن دھاندلی سے متعلق پاکستان تحریک انصاف کے سابق سیکریٹری جنرل جہانگیر ترین کی درخواست پر آج فیصلہ سنایا گیا ہے۔

الیکشن ٹربیونل نے دونوں فریقین کے وکلا کے دلائل مکمل ہونے کے بعد 20 اگست کو پٹیشن پر اپنا فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے2013 میں ہونے والے عام انتخابات میں جہانگیر ترین کے حریف آزاد امید وار محمد صدیق خان بلوچ کو کامیاب قرار دیا تھا۔

ترین نے اپنی پٹیشن میں بلوچ پر جعلی ڈگری اور پولنگ کے دوران دھاندلی کا الزام لگایا تھا ۔

خیال رہے کہ مئی 2013 کے انتخابات میں صدیق بلوچ آزاد امیدوار کی حیثیت میں شریک ہوئے تھے ان کے مد مقابل مسلم لیگ (ن) کا امیدوار بھی موجود تھا، الیکشن میں کامیابی کے بعد یہ مسلم لیگ (ن) میں شامل ہوئے تھے۔

تحریک انصاف کے حق میں فیصلہ آتے ہی پی ٹی آئی کے کارکنان نے جشن منانا شروع کر دیا۔

NA 154 PTI                    تحریک انصاف کے کارکنان ایک دوسرے کو مٹھائیاں کھلاتے رہے۔

NA 154
این اے 154 کی کامیابی پر چیئرمین پی ٹی آئی کی اہلیہ ریحام خان نے ٹویٹ کیا کہ تحریک انصاف نے ہیٹرک کر لی ہے۔

NO COMMENTS

LEAVE A REPLY