ایک ارب اینڈرائیڈ ڈیوائسز کو بگ سے خطرہ

0
1106

دنیا بھر میں ایک ارب سے زائد اینڈرائیڈ اسمارٹ فون اور ڈیوائسز نئے سیکیورٹی خطرے سے دو چار ہوگئی ہیں جسے اسٹیج فرائٹ 2.0 کا نام دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ اس سے پہلے رواں سال جولائی میں ایک بگ اسٹیج فرائٹ سامنے آیا تھا جس میں ہیکرز ایک ایم ایم ایس پیغام بھیج کر اینڈرائیڈ ڈیوائسز پر کنٹرول حاصل کرلیتے تھے۔

اب ہیکرز نے یہ کام ایم پی تھری یا ایم پی فور ویڈیو کی مدد سے کرنا شروع کردیا ہے۔

ایک موبائل سیکیورٹی کمپنی Zimperium نے اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم کی اس کمزوری کو دریافت کیا اور اس کا کہنا ہے کہ اس سے لگ بھگ ہر اینڈرائیڈ ڈیوائس متاثر ہوسکتی ہے۔

سیکیورٹی ماہرین کا کہنا ہے کہ کسی ویب سائٹ کے وزٹ کے دوران وہاں متاثرہ گانے یا ویڈیو فائل کا پریویو ہیکرز کو آپ کی موبائل ڈیوائس تک رسائی دے سکتا ہے۔

ان کے بقول ہیکرز کو ڈیوائس تک مکمل رسائی ملتی ہے اور وہ جو چاہے اس کے ساتھ کرسکتا ہے یا آپ کا ڈیٹا چرا کر شرپسندانہ مقاصد کے لیے استعمال کرسکتا ہے۔

اس بگ سے وہ اسمارٹ فونز بھی متاثر ہوسکتے ہیں جو اوریجنل اسٹیج فرائٹ سے بچ گئے تھے جیسے گوگل کی نیکسز ڈیوائسز اور سام سنگ کی گلیکسی ایس سکس سیریز۔

سیکیورٹی ماہرین کا کہنا ہے کہ اینڈرائیڈ کے میڈیا پراسیسنگ سسٹمز میں سیکیورٹی جھول موجود ہیں جس کے باعث وہ متاثرہ گانے یا ویڈیو کے ذریعے ہیکرز کو رسائی کا موقع فراہم کردیتے ہیں۔

گوگل نے پندرہ اگست کو اپنے آپریٹنگ سسٹم میں سیکیورٹی نقائص کا اعتراف کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ مسائل انتہائی اہمیت کے حامل ہیں کیونکہ اس سے ہیکرز ڈیوائسز تک رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔

اب اس نئے بگ کے لیے گوگل کی جانب سے اینڈرائیڈ کے لیے نئی سیکیورٹی اپ ڈیٹ پیر کو ریلیز کیے جانے کا امکان ہے۔

NO COMMENTS

LEAVE A REPLY